Jalozai Housing Scheme Phase-II Balloting Result 2017- Ceremony Held yesterday by CM KPK Pervaiz Khattak

Jalozai Housing Scheme Phase-II Balloting Result 2017- Ceremony Held yesterday by CM KPK Pervaiz Khattak

Jallozai Housing Scheme Peshawar-Nowshera Balloting Result Online 2017 - Location Map

Jallozai Housing Scheme Peshawar-Nowshera Balloting Result Online 2017 – Location Map

Yesterday the balloting of plots of the Jallozai housing scheme held in Peshawar. The Chief Minister of Khyber Pakhtunkhwa Mr. Pervaiz Khattak performed the balloting. The Results of Balloting of residential plots will be uploaded soon on the official website of HOUSING DEPARTMENT of Khyber Pakhtunkhwa Government.  The Government invited application from general public and employees of Govt of KPK in July 2017. While Quota for Oversees Pakistanis has been allotted.

The Balloting Results will be shared on This Website Also. Please wait…

Write Your Name and CNIC Get Result Online

http://www.housingkp.gov.pk/check-jalozai-phase-ii-plots-allotment

Plots Quota Employees/General Public/Overseas Pakistanis

Total Plots the balloting Held in Phase – II = 3757

The applications were collected through Bank of Khyber

Govt employees Plots Quota (23%) = 674

General Public Plots Quota (77%) = 2256

Plots Quota for Oversees Pakistanis = 863

Application Form Submission in Jallozai Housing Scheme

KPK Government is also Working on Following Housing Schemes:-

  • Hungu Township / Model Town at Hangu
  • Swat Model Town
  • Khappal Core Model Housing Scheme (for Govt Employees)
  • Mullazia Housing Scheme
  • Jerma Housing Scheme
  • MegaCity KaghLasht Chitral
  • Mega City Motorway-I Nowshera
CM KPK pervaiz Khattak Hold Balloting of Jallozai Housing Scheme Plots for Employees

CM KPK pervaiz Khattak Hold Balloting of Jallozai Housing Scheme Plots for Employees

پشاور ( )وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے سرکاری ملازمین اور دیگر شہریوںکے رہائشی مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے بینک ہوم فنانس کے ذریعے خپل کور ماڈل ہائوسنگ سکیم شروع کر دی ہے۔ اس سکیم کے تحت کم آمدنی والے ملازمین اور عام شہری بھی مناسب داموں اپنے مکان کے مالک بن سکیں گے۔ ابتدائی طور پر جلوزئی، ملازئی، جرما اور ڈھیری زرداد میں بینک ہوم فنانس کے ذریعے پانچ مرلہ مکانات کی تعمیر شروع کی گئی ہے۔ پہلے مرحلے میں ایک لاکھ 20 ہزار سرکاری ملازمین اور 2 لاکھ عام خاندانوں کو رہائشی سہولت مہیا کی جا رہی ہے جس کی تخمینہ لاگت تین کھرب 76 ارب روپے ہے۔ یہ تمام فنانسنگ کمرشل بینک کریں گے اور20 سال کی آسان اقساط میں یہ رقم واپس ہو گی انہوں نے امید ظاہر کی کہ ہمارے دور میں شروع کردہ ہائوسنگ سکیمیں نہ صرف مکمل ہونگی بلکہ یہ تمام بنیادی شہری سہولیات پر مبنی عالمی معیار اور جدت کا شاہکار ہونگی ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعلیٰ ہائوس پشاور میں جلوزئی ہائوسنگ سکیم نوشہرہ میں سرکاری ملازمین کیلئے پلاٹوں کی قرعہ اندازی کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کیا تقریب میں وزیراعلیٰ کے مشیر برائے ہائوسنگ ڈاکٹر امجد علی، سیکرٹری ہائوسنگ سید وقارالحسن، سینئر ممبر بورڈ آف ریونیوظفر اقبال، ڈی جی ہائوسنگ سیف الرحمان عثمانی، بینک آف خیبر اور محکمہ ہائوسنگ کے دیگر حکام نے شرکت کی اس موقع پر وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ اس ہائوسنگ سکیم میں پانچ مرلہ، سات مرلہ، دس مرلہ اور ایک کنال کے 8626 پلاٹ تیار کئے ہیں جن میں 3757 پلاٹ چار سال قبل بذریعہ قرعہ اندازی تقسیم کئے گئے تھے جبکہ دوسرے مرحلے میں 3793 پلاٹوں کی قرعہ اندازی کی گئی ہے جس کیلئے بینک آف خیبر کے ذریعے4553 درخواستیں جمع ہوئی تھیں حالیہ قرعہ اندازی کے تحت 23 فیصد کے حساب سے 674 پلاٹ سرکاری ملازمین، 77 فیصد کی شرح سے 2256 پلاٹ عام شہریوں جبکہ سمندر پار پاکستانیوں کیلئے 863 پلاٹ مختص کئے گئے ہیں وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہمارے صوبے میں تقریباً 20 لاکھ مکانات کی کمی ہے جس کیلئے کثیر سرمایہ کاری کی ضرورت ہے سرکاری شعبہ اس کمی کو پورا کرنے کیلئے درکار وسائل مکمل طور پر مہیا نہیں کر سکتا اس لئے صوبائی حکومت ہائوسنگ کے شعبے میں نجی سیکٹر کے ذریعے سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کر رہی ہے ۔ہر ضلع میںسیٹیلائٹ ٹائون قائم کئے جارہے ہیںجو منصوبہ بندی کے تحت بنائے گئے متبادل شہر ہوں گے اور جو تمام سہولیات سے آراستہ ہونگے انہوں نے کہا کہ صوبائی ہائوسنگ اتھارٹی نجی شعبے کے اشتراک سے کئی کمرشل مال اور اپارٹمنٹس کے ساتھ ساتھ ہنگو ٹائون شپ اور سوات ماڈل ٹائون کی تعمیر پر کام کر رہی ہے ان جامع اقدامات سے صوبے میں معاشی ترقی بھی ہوگی اور روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔

Share